صدر مملکت کا پارلیمنٹ سے خطاب بہت اچھا تھا ،جمہوریت مستحکم ہورہی ہے،وزیراعلیٰ بلوچستان

کوئٹہ………. بلوچستان کے وزیراعلیٰ نواب ثناء اﷲ زہری نے کہا ہے کہ صدر مملکت ممنون حسین کا پارلیمنٹ سے خطاب بہت اچھا تھا اور جمہوریت مستحکم ہورہی ہے اور یہ دوسرا موقع ہے کہ سابق صدر آصف زرداری کے بعد ایک منتخب صدر نے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے پانچ مرتبہ خطاب کیا ہے‘ اپوزیشن کو احتجاج کا جمہوری حق حاصل ہوتا ہے‘ بلوچستان میں امن و امان کی صورتحال میں نمایاں بہتری آئی ہے اور نیا بجٹ جلد بلوچستان اسمبلی میں پیش کردیا جائے گا۔ پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے صدر کے خطاب کے بعد ’’آئی این پی‘‘ سے بات چیت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ بلوچستان نے کہا کہ صدر ممنون حسین نے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے اپنے خطاب میں حکومت کی کامیابیوں کا تذکرہ کیا ہے۔ پانچ سالوں کے دوران پاکستان میں جمہوری ادارے مضبوط ہوئے ‘ دہشت گردی کے خلاف نمایاں کامیابیاں حاصل کی گئیں۔ بلوچستان میں وزیراعظم نواز شریف کے ویژن اور سیاسی دانشمندی کے مطابق عمل کیا گیا جس کے نتیجے میں وہاں نہ صرف امن و امان کی صورتحال میں نمایاں بہتری ہوئی بلکہ صوبے میں سی پیک کے نتیجے میں ترقی کا ایک نیا دور شروع ہورہا ہے۔ گوادر پورٹ پر تیزی سے کام جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے ساتھ حالیہ دورہ چین کے دوران گوادر پورٹ سمیت دیگر منصوبوں پر چینی حکومت سے کئی معاہدوں پر دستخط بھی ہوئے ہیں۔ ایک سوال پر وزیراعلیٰ نے کہا کہ اپوزیشن کو احتجاج کا جمہوری حق حاصل ہوتا ہے اور آئینی حدود میں رہ کر اگر اپوزیشن احتجاج کرے تو اس میں کوئی حرج نہیں ہوتا۔ ایک اور سوال پر انہوں نے کہا کہ بلوچستان کا نیا بجٹ تیار کیا جاچکا ہے جو جلد صوبائی اسمبلی میں منظوری کے لئے پیش کردیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ وہ اسلام آباد میں رکنے کی بجائے فوری طور پر کوئٹہ واپس جارہے ہیں تاکہ بجٹ کی تیاریوں کو حتمی شکل دی جاسکے۔

شئیر کریں