روہنگیا میں مسلمانوں کا قتل عام ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت نسل کشی کا منظم منصوبہ ہے،کرامت شیخ

ملتان…..پاک سرزمین پارٹی کے مرکزی رہنما وممبرپی اوسی کرامت علی شیخ نے کہا ہے کہ برما روہنگیا میں بے گناہ مسلمانوں کا سرعام قتل اور بین الاقوامی طاقتوں’ اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی علمبردار تنظیموں کی مجرمانہ خاموشی دوہرے معیار کی عین عکاسی کرتی ہے، کسی بھی ناحق کو قتل کرنا بہت بڑا جرم ہے اور اس پر سرد مہری اس سے بڑا مجرمانہ فعل ہے، اب منافقانہ پالیسی نہیں چلے گی عالمی طاقتوں کو بے گناہ لوگوں کا وحشیانہ قتل عام رکوانے کے لئے عملی طو رپر اقدامات اٹھانا ہوں گے۔اپنے ایک بیان میں پاک سرزمین پارٹی کے رہنما کرامت علی شیخ نے کہا کہ روہنگیا میں مسلمانوں کا قتل عام ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت نسل کشی کا منظم منصوبہ ہے کیونکہ یہ سب کچھ ریاست کے ذمہ داروں کی ملی بھگت کا نتیجہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ سب سے زیادہ افسوس دہ بات یہ ہے کہ عالم اسلام کے رہنما ذاتی مفادات کی خاطر بکھرے ہوئے ہیں اگر اتحاد و اتفاق کا مظاہرہ کیا جائے اور یک آواز ہو کر الٹی میٹم دیا جائے تو کوئی وجہ نہیں کہ عالمی سطح پر شنوائی نہ ہو پھر فی الفور یہ سلسلہ رک سکتا ہے سب سے پہلے تمام اسلامی ممالک کو میانمار سے فی الفور سفارتی تعلقات منقطع کردینے چاہئیں اور اقوام متحدہ پر دباؤ ڈالیں کہ برما کی فوج براہ راست اس گھناؤنے فعل میں ملوث ہے۔ عالمی عدالت میں اس وحشیانہ قتل کے خلاف مقدمہ چلایا جائے اور ملزمان کو قرار واقعی سزا دی جائے۔ اس وقت تک بین الاقوامی سطح پر اقتصادی پابندی لگانی چاہئے۔

شئیر کریں