سردار علی پہلوان کی یاد میں جشن آزادی دنگل کا انعقاد ۔۔۔رپورٹ : محمد جنید اکرم

سردار علی پہلوان کی یاد میں جشن آزادی دنگل کا انعقاد ۔۔۔۔۔۔
پاکستان مسلم لیگ یوتھ ونگ کے مرکزی سینئر نائب صدراور ڈسٹرکٹ ریسلنگ ایسوسی ایشن کے سینئر نائب صدر اسلم طاہر انصاری کے والد محترم اور زکرین قرأت اینڈ نعت سوسائٹی کے سابق صدر محمد جنید اکرم کے دادا جان فخر ملتان سردار علی پہلوان کی یاد میں جشن آزادی دنگل کا انعقاد یوتھ سنٹر ملتان میں کیا گیا جس میں شائقین فن پہلوانی کی بہت بڑی تعداد نے شرکت کی۔
سردار علی پہلوان مرحوم کا شمار فن پہلوانی کے حوالہ سے ملتان کے ان چند لوگوں میں ہوتا ہے جنہوں نے اپنی ساری زندگی نوجوانوں میں صحت مند سرگرمیوں کے فروغ کیلئے گزار دی۔ اور نوجوانوں کو صحت کی اہمیت کے بارے میں آگاہی کیلئے اس عظیم فن کا انتخاب کیا اور اس حوالہ سے پاکستان بھر میں نام پیدا کیا۔ ان کے شاگردوں پیڑا پہلوان، ٹھسہ پہلوان، ریاض پہلوان، خادم پہلوان، سلامت پہلوان، بنیامین پہلوان اور بھولا پہلوان نے فن پہلوانی میں اپنے استاد کا نام روشن کیا۔ 1975ءمیں پیڑا پہلوان نے مختلف مقابلوں میں کامیابی حاصل کرنے کے بعد فاضل میں شیما پہلوان کو چت کر کے رستم ملتان ڈویژن کا ٹائٹل سرکاری سطح پر حاصل کیا۔ ان کے بیٹے اصغر علی پہلوان نے بھی اس فن میں نام پیدا کیا۔
سردار علی پہلوان کا پچھلے سال انتقال ہو گیا تھا۔ ان کی خدمات کے اعتراف اور ان کی یاد میں ۵۲ اگست بروز جمعہ کو جشن آزادی دنگل کا انعقاد کیا گیا۔
دنگل میں اچھو پہلوان کا مقابلہ ربنواز پہلوان ملاح سے ہوا۔ اچھو پہلوان نے ربنواز پہلوان کو چت کر دیا۔ اسی طرح ناصر پہلوان نے اپنے مقابل مجید ملاح کو ہرا دیا اور رمضان پہلوا، فیاض پہلوان، علی شیر پہلوان اور معین اسلم پہلوان نے اپنے حریفوں کو چت کر کے کامیابی حاصل کی۔
دنگل میں مہمانانِ خصوصی حاجی جاوید اختر انصاری، قمر عباس بھولا پہلوان، ارشد بوٹا، ادریس بٹ، حاجی صدیق (فیصل آباد) ، محمد اکرم انصاری، اصغر علی پہلوان، علی رضا انصاری، فرخ لطیف، ملک اسلم ڈوگر، طاہر عباس اعوان، نوید بشیر، اشفاق انصاری، ریاض پہلوان، عبدالمجید ڈھاکے والا، نتھا پہلوان، اچھی پہلوان ، یاسر عباس کاکا پہلوان، حاجی عامر انصاری، حامد خاں پہلوان، ماکھا پہلوان، آصف پہلوان، اویس حیدر، سجاد حاجی مولا بخش، بابا صابر علی، فاروق شریف ،اسد پہلوان ، ارسلان طاہراور فیضان الرحمٰن سمیت شائقین فن پہلوانی کی ایک بہت بڑی تعداد موجود تھی۔ ;
شائقین فن پہلوانی کے دنگل کے بہترین انتظامات اور بہترین کشتیوں کے انعقاد پر سردار علی پہلوان کے صاحبزادوں اسلم طاہر انصاری، اکرم انصاری، اصغر علی پہلوان اور جنید اکرم انصاری کی کاوشوں کو سراہا اور پہلوانوں کی کشتیوں سے لطف اندوز ہوئے۔
اسلم طاہر انصاری اور ان کے بھائیوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ اپنے والد کے فن پلوانی کے فروغ کے لیے اپنا بھر پور کردار ادا کرتے رہیں گے اور آئندہ بھی شائقینِ فنِ پہلوانی کو ایسے مقابلے فری دیکھنے کو ملیں گے۔

شئیر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں