برما میں مسلمانوں کی نسل کشی کیخلاف مذہبی جماعتوں کے احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری ،ملتان میں مرکزی جمعیت اہلحدیث اور تاجرتنظیموں کے احتجاجی مظاہرے، برما کے ساتھ سفارتی تعلقات ختم کرنے کا مطالبہ

ملتان (محمد عبداللہ سے)برما میں مسلمانوں کی نسل کشی کیخلاف مذہبی جماعتوں کے احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے۔منگل کو مرکزی جمعیت اہلحدیث سمیت تاجرتنظیموں نے ملتان میں احتجاجی مظاہرے کیے۔احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی جمعیت اہلحدیث کے ضلعی امیر شیخ محمد شریف چنگوانی، ضلعی ناظم علامہ عنایت اللہ رحمانی نے کہا ہے کہ برما کے ساتھ تمام تر سفارتی تعلقات ختم کیے جائیں۔مرکزی جمعیت اہلحدیث پاکستان کے نائب امیر مولانا ابو تراب کی بازیابی کو یقینی بنایا جائے ہمارے صبر اور امن پسندی کی خواہش کا امتحان نہ لیا جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکزی جمعیت اہلحدیث کے زیر اہتمام بوسن روڈ پر مرکز ابنِ قاسم کے باہر برما میں مسلمانوں کے قتل عام کیخلاف اور مولانا ابوتراب کی بازیابی کیلئے احتجاجی مظاہرے کی قیادت کرتے ہوئے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے مزید کہا پاکستان کے حکمران برما میں مسلمانوں پر مظالم کو رکوانے میں موثر کردار ادا کریں۔ مرکزی جمعیت اہلحدیث پرامن جماعت ہے۔ سینئر نائب امیر مولانا علی محمد ابوتراب کا کوئٹہ سے اغوا ہو نے ہونا باعث تشویش ہے انکی بازیابی کو جلد از جلد یقینی بنایا جائے ورنہ احتجاجی دائرہ وسیع کریں گے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے اہلحدیث جنوبی پنجاب کے جنرل سیکرٹری قاری ہدایت اللہ رحمانی، قاری عطاء اللہ عزیز سٹی ناظم، مہتمم جامعہ اسلامیہ مفتی عبد الرحمن شاہین نے اپنے خطاب میں کہا کہ مولانا ابوتراب امن کے سفیر اور عظیم داعی اسلام ہیں۔ اتحاد امت کے داعی ابو تراب کے اغوا سے کارکنوں میں اضطراب کی لہر دوڑ گئی ہے۔ انکی بازیابی کو ہمارے قابل فخر بااعتماد سیکیورٹی ادارے انکی بازیابی کو یقینی بنائیں۔ اس موقع پر مظاہرین نے بینرز کتبے جھنڈے اٹھا رکھے تھے۔ اور برما حکومت یو این او کے خلاف، مولانا ابوتراب کی بازیابی کیلئے نعرے بازی کی۔ اور متعدد قراردادیں بھی اس موقع پر پیش اور منظور کی گئیں۔ مظاہرے میں سٹی ناظم قاری عطاء اللہ عزیز، اہلحدیث یوتھ فورس پاکستان کے مرکزی ناظم تبلیغ قاری اسماعیل عتیق، حمزہ حسن، چوہدری عبد اللطیف، ملک ریاض، چوہدری عبد الرشید، حافظ ریاض، مولانا عمر، قاری صدیق، طاہر محمود، نعیم بلوچ ودیگر رہنماؤں نے بھی خطاب کیا۔ جبکہ اس موقع پر کارکنوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔انجمن تاجران اکبر روڈ چوک شہیداں، امن پنجاب رکشہ یونین کے زیر اہتمام میانمار، روہنگیامیں مسلمانوں کے قتل عام کے خلاف احتجاجی مظاہرہ محمد ادریس بٹ، عارف فصیح اللہ کی قیادت میں ہوا جبکہ شیخ الطاف، اسلم طاہر انصاری، صوفی صدیق، عاصم بھٹی، مقبول خان، علیم ٹائیگر، مہراد علی، رانااسلم ، نا صر تھہیم، شہزاد علی، نذر عباس، اورنگزیب سمیت درجنوں تاجران نے شرکت کی ۔ اس موقع پر مظاہرین برما حکومت اور عالمی انسانی حقوق تنظیموں، یو این او کے خلاف نعرے بازی کی ۔ مظاہرین نے بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ادریس بٹ کا کہنا تھا کہ روہنگیا میں8 مسلمانوں کا قتل عام انسانیت کی تذلیل کی بدترین مثال ہے۔مسلم حکمرانوں ہوش کے ناخن لینے چاہیءں۔ امت مسلمہ کا اتحاد نا گزیر ہوچکا ہے مسلم حکمران ملی غیرت کا مظاہرہ کرتے ہوئے روہنگیا کے مسلمانوں پر مظالم بند کرائیں۔عارف فصیح اللہ نے کہا کہ برما حکومت پر عالمی عدالت میں مقدمہ چلایا جائے اور قاتل حکومت کو تختہ دار پر لٹکایا جائے۔دوسری طرف ملتان میں انجمن تاجران زکریا ٹاؤن نے روہنگیا برما کے مسلمانوں کے ظلم کے خلاف ریلی جس کی قیادت صدر رانا ارشاد ،جنرل سیکرٹری محمدآصف شاہ نے کی جبکہ ملک منیر آرائیں ،راؤ آصف ،رانا فاروق ٹیپو ،ملک رمضان سیال ،رانا یعقوب ،رانا یوسف ،ربنواز کھگہ ،شوکت بھٹی ،مشرف اوراہل علاقہ نے بھرپور شرکت کی ۔اس موقع پر مظاہرین نے بینرز ، کتبے، پلے کارڈ بھی اٹھا رکھے تھے۔ مظاہرے کے شرکا ء نے برما حکومت اور یواین او کے خلاف خوب نعرے بازی کی۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے صدر رانا ارشادنے کہا کہ مسلمانوں کا قتل عام اقوا م متحدہ اور انسانی حقوق کی تنظیموں کو کیوں نہیں دکھائی دیتا۔ برما میں مسلمانوں کے قتل عام کی شدید مذمت کرتے ہیں اقوام متحدہ برما حکومت کو لگام ڈالے۔ پاکستانی حکومت کو چاہیئے کہ وہ برما سفیر کو ملک بد ر کرے ۔ جنرل سیکرٹری محمدآصف شاہ کا کہنا تھا کہ روہنگیا میں مسلمانوں کی منظم سازش کے تحت نسل کشی کی جارہی ہے اس ضمن میں او آئی سی اور پاکستانی حکومت کو ذمہ دارانہ کردار ادا کرنا چاہیئے۔پاکستان میں برما کا سفارت خانہ بند کیا جائے۔ مظاہرے میں برما سفارت خانے کو بند کرنے اوربرما کے سفیروں کو ملک بدر کرنے کی قرار داد بھی منظور کی گئی۔

شئیر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں